Women polling stations without walls

کیا انتخابات میں پولنگ اسٹیشن کا کوئی کردار نہیں؟

انتخابی عمل میں پولنگ اسٹیشن کا ایک اہم کردار ہے، پولنگ اسٹیشن کا فاصلہ، عمارت کی حالت اور وہاں پر دستیاب سہولیات ووٹرز کے لیے اہمیت کی حامل ہیں۔ لیکن کس عمارت کو پولنگ اسٹیشن کا درجہ دینا ہے یا پولنگ اسٹیشن ڈکلئیر کرنے کے لیے کیا شرائط ہیں؟ اس ضمن میں کوئی ضابطہ اخلاق نظر نہیں آتا۔
2018 کے عام انتخابات قریب ہیں لیکن پولنگ اسٹیشن سے متعلق کوئی واضح پالیسی نظر نہیں آرہی۔
الیکشن کمیشن آف پاکستان زیادہ تر سرکاری سکولوں اور کالجوں کو پولنگ اسٹیشن کا درجہ دیتا ہے جبکہ سکولوں کی زیادہ تعداد دیہی علاقوں میں ہے اور آبادی کا ایک بڑا حصہ بھی دیہاتوں میں رہائش پذیر ہے۔ پولنگ اسٹیشن کی چار دیواری نہ ہونا، پانی کی عدم دستیابی، بیٹھنے کے لیے سہولیات کی عدم دستیابی جیسے اہم مسائل ہیں۔ یہ وہ مسائل ہیں جو عام انتخابات میں خواتین کو انتخابی عمل سے دور رکھنے کا باعث بنتے ہیں اور خواتین کے ٹرن آؤٹ میں درپیش آنے والے مسائل میں سے ایک اہم مسئلہ ہے۔
الیکشن کمیشن آف پاکستان کے مطابق عام انتخابات 2013 میں ضلع اوکاڑہ میں کل 1163 پولنگ اسٹیشن قائم کیے گئے جبکہ اس وقت کل ووٹرز کی تعداد 15 لاکھ 7 ہزار 246 ہے جن میں سے خواتین 6 لاکھ 60 ہزار 546 ہیں۔

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*